یومِِ عاشورہ تاریخ کے آئینہ میں


                یوم عاشورہ بڑا ہی مہتم بالشان اور عظمت کا حامل دن ہے، تاریخ کے عظیم واقعات اس سے جڑے ہوئے ہیں:


(۱)          یوم عاشورہ میں ہی آسمان وزمین، قلم اور حضرت آدم علیہ السلام کو پیدا کیاگیا۔


(۲)         اسی دن حضرت آدم علیٰ نبینا وعلیہ الصلاة والسلام کی توبہ قبول ہوئی۔


(۳)         اسی دن حضرت ادریس علیہ السلام کو آسمان پر اٹھایا گیا۔


(۴)         اسی دن حضرت نوح علیہ السلام کی کشتی ہولناک سیلاب سے محفوظ ہوکر کوہِ جودی پر لنگرانداز ہوئی۔


(۵)         اسی دن حضرت ابراہیم علیہ السلام کو ،،خلیل اللہ“ بنایا گیا اور ان پر آگ گلِ گلزار ہوئی۔


(۶)          اسی دن حضرت اسماعیل علیہ السلام کی پیدائش ہوئی۔


(۷)         اسی دن حضرت یوسف علیہ السلام کو قید خانے سے رہائی نصیب ہوئی اور مصر کی حکومت ملی۔


(۸)         اسی دن حضرت یوسف علیہ السلام کی حضرت یعقوب علیہ السلام سے ایک طویل عرصے کے بعد ملاقات ہوئی۔


(۹)          اسی دن حضرت موسیٰ علیہ السلام اور ان کی قوم بنی اسرائیل کو فرعون کے ظلم واستبداد سے نجات حاصل ہوئی۔


(۱۰)        اسی دن حضرت موسیٰ علیہ السلام پر توریت نازل ہوئی۔


(۱۱)         اسی دن حضرت سلیمان علیہ السلام کو بادشاہت واپس ملی۔


(۱۲)        اسی دن حضرت ایوب علیہ السلام کو سخت بیماری سے شفا نصیب ہوئی۔


(۱۳)       اسی دن حضرت یونس علیہ السلام چالیس روز مچھلی کے پیٹ میں رہنے کے بعد نکالے گئے۔


(۱۴)       اسی دن حضرت یونس علیہ السلام کی قوم کی توبہ قبول ہوئی اور ان کے اوپر سے عذاب ٹلا۔


(۱۵)        اسی دن حضرت عیسیٰ علیہ السلام کی پیدائش ہوئی۔


(۱۶)        اور اسی دن حضرت عیسیٰ علیہ السلام کو یہودیوں کے شر سے نجات دلاکر آسمان پر اٹھایاگیا۔


(۱۷)       اسی دن دنیا میں پہلی بارانِ رحمت نازل ہوئی۔


(۱۸)       اسی دن قریش خانہٴ کعبہ پر نیا غلاف ڈالتے تھے۔


(۱۹)        اسی دن حضور اکرم  صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت خدیجة الکبریٰ رضی اللہ عنہ سے نکاح فرمایا۔


(۲۰)       اسی دن کوفی فریب کاروں نے نواسہٴرسول  صلی اللہ علیہ وسلم اور جگر گوشہٴ فاطمہ رضی اللہ عنہما کو میدانِ کربلا میں شہید کیا گیا

※※※※ تاریخ کے آئینہ میں *

                یوم عاشورہ بڑا ہی مہتم بالشان اور عظمت کا حامل دن ہے، تاریخ کے عظیم واقعات اس سے جڑے ہوئے ہیں:


(۱)          یوم عاشورہ میں ہی آسمان وزمین، قلم اور حضرت آدم علیہ السلام کو پیدا کیاگیا۔


(۲)         اسی دن حضرت آدم علیٰ نبینا وعلیہ الصلاة والسلام کی توبہ قبول ہوئی۔


(۳)         اسی دن حضرت ادریس علیہ السلام کو آسمان پر اٹھایا گیا۔


(۴)         اسی دن حضرت نوح علیہ السلام کی کشتی ہولناک سیلاب سے محفوظ ہوکر کوہِ جودی پر لنگرانداز ہوئی۔


(۵)         اسی دن حضرت ابراہیم علیہ السلام کو ،،خلیل اللہ“ بنایا گیا اور ان پر آگ گلِ گلزار ہوئی۔


(۶)          اسی دن حضرت اسماعیل علیہ السلام کی پیدائش ہوئی۔


(۷)         اسی دن حضرت یوسف علیہ السلام کو قید خانے سے رہائی نصیب ہوئی اور مصر کی حکومت ملی۔


(۸)         اسی دن حضرت یوسف علیہ السلام کی حضرت یعقوب علیہ السلام سے ایک طویل عرصے کے بعد ملاقات ہوئی۔


(۹)          اسی دن حضرت موسیٰ علیہ السلام اور ان کی قوم بنی اسرائیل کو فرعون کے ظلم واستبداد سے نجات حاصل ہوئی۔


(۱۰)        اسی دن حضرت موسیٰ علیہ السلام پر توریت نازل ہوئی۔


(۱۱)         اسی دن حضرت سلیمان علیہ السلام کو بادشاہت واپس ملی۔


(۱۲)        اسی دن حضرت ایوب علیہ السلام کو سخت بیماری سے شفا نصیب ہوئی۔


(۱۳)       اسی دن حضرت یونس علیہ السلام چالیس روز مچھلی کے پیٹ میں رہنے کے بعد نکالے گئے۔


(۱۴)       اسی دن حضرت یونس علیہ السلام کی قوم کی توبہ قبول ہوئی اور ان کے اوپر سے عذاب ٹلا۔


(۱۵)        اسی دن حضرت عیسیٰ علیہ السلام کی پیدائش ہوئی۔


(۱۶)        اور اسی دن حضرت عیسیٰ علیہ السلام کو یہودیوں کے شر سے نجات دلاکر آسمان پر اٹھایاگیا۔


(۱۷)       اسی دن دنیا میں پہلی بارانِ رحمت نازل ہوئی۔


(۱۸)       اسی دن قریش خانہٴ کعبہ پر نیا غلاف ڈالتے تھے۔


(۱۹)        اسی دن حضور اکرم  صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت خدیجة الکبریٰ رضی اللہ عنہ سے نکاح فرمایا۔


(۲۰)       اسی دن کوفی فریب کاروں نے نواسہٴرسول  صلی اللہ علیہ وسلم اور جگر گوشہٴ فاطمہ رضی اللہ عنہما کو میدانِ کربلا میں شہید کیا گیا

※※※※ عاشورہ تاریخ کے آئینہ میں *

                یوم عاشورہ بڑا ہی مہتم بالشان اور عظمت کا حامل دن ہے، تاریخ کے عظیم واقعات اس سے جڑے ہوئے ہیں:


(۱)          یوم عاشورہ میں ہی آسمان وزمین، قلم اور حضرت آدم علیہ السلام کو پیدا کیاگیا۔


(۲)         اسی دن حضرت آدم علیٰ نبینا وعلیہ الصلاة والسلام کی توبہ قبول ہوئی۔


(۳)         اسی دن حضرت ادریس علیہ السلام کو آسمان پر اٹھایا گیا۔


(۴)         اسی دن حضرت نوح علیہ السلام کی کشتی ہولناک سیلاب سے محفوظ ہوکر کوہِ جودی پر لنگرانداز ہوئی۔


(۵)         اسی دن حضرت ابراہیم علیہ السلام کو ،،خلیل اللہ“ بنایا گیا اور ان پر آگ گلِ گلزار ہوئی۔


(۶)          اسی دن حضرت اسماعیل علیہ السلام کی پیدائش ہوئی۔


(۷)         اسی دن حضرت یوسف علیہ السلام کو قید خانے سے رہائی نصیب ہوئی اور مصر کی حکومت ملی۔


(۸)         اسی دن حضرت یوسف علیہ السلام کی حضرت یعقوب علیہ السلام سے ایک طویل عرصے کے بعد ملاقات ہوئی۔


(۹)          اسی دن حضرت موسیٰ علیہ السلام اور ان کی قوم بنی اسرائیل کو فرعون کے ظلم واستبداد سے نجات حاصل ہوئی۔


(۱۰)        اسی دن حضرت موسیٰ علیہ السلام پر توریت نازل ہوئی۔


(۱۱)         اسی دن حضرت سلیمان علیہ السلام کو بادشاہت واپس ملی۔


(۱۲)        اسی دن حضرت ایوب علیہ السلام کو سخت بیماری سے شفا نصیب ہوئی۔


(۱۳)       اسی دن حضرت یونس علیہ السلام چالیس روز مچھلی کے پیٹ میں رہنے کے بعد نکالے گئے۔


(۱۴)       اسی دن حضرت یونس علیہ السلام کی قوم کی توبہ قبول ہوئی اور ان کے اوپر سے عذاب ٹلا۔


(۱۵)        اسی دن حضرت عیسیٰ علیہ السلام کی پیدائش ہوئی۔


(۱۶)        اور اسی دن حضرت عیسیٰ علیہ السلام کو یہودیوں کے شر سے نجات دلاکر آسمان پر اٹھایاگیا۔


(۱۷)       اسی دن دنیا میں پہلی بارانِ رحمت نازل ہوئی۔


(۱۸)       اسی دن قریش خانہٴ کعبہ پر نیا غلاف ڈالتے تھے۔


(۱۹)        اسی دن حضور اکرم  صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت خدیجة الکبریٰ رضی اللہ عنہ سے نکاح فرمایا۔


(۲۰)       اسی دن کوفی فریب کاروں نے نواسہٴرسول  صلی اللہ علیہ وسلم اور جگر گوشہٴ فاطمہ رضی اللہ عنہما کو میدانِ کربلا میں شہید کیا گیا

※※※※ عاشورہ تاریخ کے آئینہ میں *

                یوم عاشورہ بڑا ہی مہتم بالشان اور عظمت کا حامل دن ہے، تاریخ کے عظیم واقعات اس سے جڑے ہوئے ہیں:


(۱)          یوم عاشورہ میں ہی آسمان وزمین، قلم اور حضرت آدم علیہ السلام کو پیدا کیاگیا۔


(۲)         اسی دن حضرت آدم علیٰ نبینا وعلیہ الصلاة والسلام کی توبہ قبول ہوئی۔


(۳)         اسی دن حضرت ادریس علیہ السلام کو آسمان پر اٹھایا گیا۔


(۴)         اسی دن حضرت نوح علیہ السلام کی کشتی ہولناک سیلاب سے محفوظ ہوکر کوہِ جودی پر لنگرانداز ہوئی۔


(۵)         اسی دن حضرت ابراہیم علیہ السلام کو ،،خلیل اللہ“ بنایا گیا اور ان پر آگ گلِ گلزار ہوئی۔


(۶)          اسی دن حضرت اسماعیل علیہ السلام کی پیدائش ہوئی۔


(۷)         اسی دن حضرت یوسف علیہ السلام کو قید خانے سے رہائی نصیب ہوئی اور مصر کی حکومت ملی۔


(۸)         اسی دن حضرت یوسف علیہ السلام کی حضرت یعقوب علیہ السلام سے ایک طویل عرصے کے بعد ملاقات ہوئی۔


(۹)          اسی دن حضرت موسیٰ علیہ السلام اور ان کی قوم بنی اسرائیل کو فرعون کے ظلم واستبداد سے نجات حاصل ہوئی۔


(۱۰)        اسی دن حضرت موسیٰ علیہ السلام پر توریت نازل ہوئی۔


(۱۱)         اسی دن حضرت سلیمان علیہ السلام کو بادشاہت واپس ملی۔


(۱۲)        اسی دن حضرت ایوب علیہ السلام کو سخت بیماری سے شفا نصیب ہوئی۔


(۱۳)       اسی دن حضرت یونس علیہ السلام چالیس روز مچھلی کے پیٹ میں رہنے کے بعد نکالے گئے۔


(۱۴)       اسی دن حضرت یونس علیہ السلام کی قوم کی توبہ قبول ہوئی اور ان کے اوپر سے عذاب ٹلا۔


(۱۵)        اسی دن حضرت عیسیٰ علیہ السلام کی پیدائش ہوئی۔


(۱۶)        اور اسی دن حضرت عیسیٰ علیہ السلام کو یہودیوں کے شر سے نجات دلاکر آسمان پر اٹھایاگیا۔


(۱۷)       اسی دن دنیا میں پہلی بارانِ رحمت نازل ہوئی۔


(۱۸)       اسی دن قریش خانہٴ کعبہ پر نیا غلاف ڈالتے تھے۔


(۱۹)        اسی دن حضور اکرم  صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت خدیجة الکبریٰ رضی اللہ عنہ سے نکاح فرمایا۔


(۲۰)       اسی دن کوفی فریب کاروں نے نواسہٴرسول  صلی اللہ علیہ وسلم اور جگر گوشہٴ فاطمہ رضی اللہ عنہما کو میدانِ کربلا میں شہید کیا گیا

※※※※

Share: